بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ، کراچی کے شہری سڑکوں پر نکل آئے

کراچی کے مختلف علاقوں میں گزشتہ کئی روز سے کے الیکڑک کی جانب سے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے متاثرہ علاقوں میں یومیہ 6 سے 14 گھنٹے بجلی غائب ہونا معمول بن گیا بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ اور گرمی سے ستائے شہریوں کے صبر کا پیمانہ لبریز ہوا تو وہ سراپا احتجاج بن گئے کراچی کے علاقے لائنزایریا، صدر، جمشید روڈ، لسبیلہ، گولی مار، لانڈھی، یاسین آباد سمیت شہر کے کئی علاقوں میں شہری کے الیکٹرک کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کے خلاف سڑکوں پر نکل آئے مظاہرین نے مختلف شاہراہوں کو ٹریفک کے لیے بند کرکے شدید احتجاج کیاجس کے باعث ٹریفک کی آمد و رفت معطل ہوگئی مظاہرین نے پلے کارڈز اور بینرز اٹھا رکھے تھے جن پر کے الیکٹرک کے خلاف نعرے درج تھے مظاہرین کا کہنا تھا کہ بجلی کی طویل بندش کی وجہ سے کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے خطرات مزید بڑھ گئے ہیں کراچی میں ہزاروں کورونا وائرس کے مریض گھروں میں آئسولیٹ ہیں لیکن ان کا بھی بجلی کی طویل بندش اور شدید گرمی کے باعث گھروں میں رہنا ناممکن ہوگیا ہے مظاہرین نے وزیر اعلی سندھ سے مطالبہ کیا کہ وہ شہر میں ہونے والی بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا فوری طور پر نوٹس لیتے ہوئے کے الیکٹرک انتظامیہ کو بلا تعطل بجلی کی فراہمی یقینی بنانے کی ہدایت کریں.

100% LikesVS
0% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں